آئیں سب ملکر لوگوں کے معاشی اور جمہوری حقوق کیلئے ملکر جدوجہد کریں: بلاول بھٹو زرداری کا لاہور ہائی کورٹ بار سے خطاب

لاہور:چیئرمن پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ لاہور ہائی کورٹ بھٹو شہید کے قتل کا کرائم سین ہے۔ قوم آج بھی ذولفقار علی بھٹو اور محترمہ بے نظیر بھٹو کے مقدمات میں انصاف کا تقاضا کر رہی ہے۔ہمیں عدلیہ سے آج بھی انصاف کی امید ہے۔اعلی عدلیہ میں مزید خواتین ججز کو شامل کیا جانا چاہیے۔ وہ لاہور ہائی کورٹ بار دے خطاب کریں رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آمرانہ قوتوں کا سب سے پہلا نشانہ قانون کی حکمرانی ہوتی ہے ۔ہم نے ایوب ضیاء یحیی اور مشرف کی آمریتوں کا مقابلہ کیا ۔لاہور ہائی کورٹ بار وہ بار ہے جس نے آمریتوں کے خلاف جدوجہد کی ۔ پاکستان میں جمہوریت ، انسانی حقوق اظہار رائے کی آزادی کے ساتھ جڑی ہے ۔ایک وکیل بیریسٹر قائد اعظم نے پاکستان بنایا ۔ایک اور بیریسٹر ذوالفقار علی بھٹو نے پاکستان کو آئین دیا۔دہائیوں تک یہ ملک بغیر آئین کے خلاف بھٹو نے 73ء میں آئین دیا، پارلمینٹ سب سے سپریم ادارے ٹھہری ۔ضیاء الحق نے شب خون مار کر حکومت ختم اور آئین توڑ دیا۔ مقبول ترین عوامی وزیراعظم کو ایک عدالتی کارروائی کے ذریعے قتل کیا گیا۔ضیاء الحق نے ہزاروں کارکنوں کو جیلوں میں ڈالا اور قتل کیا ۔ سیاسی کارکنوں اور وکلا کا کورٹ مارشل کیا گیا
۔ضیاء اور مشرف نے آئین توڑ کر ملک کے نظام کی شکل بگاڑ دی ۔پیپلز پارٹی حکومت نے ہمیشہ آئین اور پارلیمنٹ کو بالادستی دلوائی ۔لاہور ہائی کورٹ بھٹو کے قتل کا کرائم سین ہے ۔ شہید بی بی اور آصف زرداری کو اسی لاہور ہائی کورٹ نے جھوٹے مقدمات میں سزا سنائی ۔ججوں کو فون کر کے شہید محترمہ اور آصف زرداری کو سزا سنائی گئی ۔ بھٹو کے قتل کے خلاف عدالتی ریفرنس آج بھی عدالت میں زیرالتوا ہے
میں بار اور بنچ سے گذارش کرتا ہوں کہ بھٹو شہید کو انصاف دیا جائے
اگر بھٹو اور بینظیر کو بھی انصاف نہیں ملے گا تو عام آدمی کو کہاں ملے گا
عدالتوں نے ماضی میں سوموٹو اختیار کیا غلط استعمال کیا ۔ بار اور بنچ سؤموٹو کے اختیار پر نظر ثانی کریں ۔ پی پی پی چاہتی ہے کہ خواتین ججز بھی اعلی عدلیہ میں ہوں
106 اعلی عدلیہ کی ججوں میں سے صرف 6 خواتین جج ہیں ۔انصاف تک رسائی قانون کی حکمرانی کی بنیاد ہے ۔کمزور طبقات کی نظام انصاف تک رسائی ممکن بنائی جائے ۔جنسی تشدد کا نشانہ بننے والوں کو بھی انصاف دلانے کیلئے۔ نئے پاکستان میں نئی آمریت اور فاشزم کی نئی شکل دیکھ رہے ہیں
لوگوں کے تمام حقوق تک چھین لیے گئے ہیں ۔ جو حقوق اور ضیاء اور مشرف نہیں چھین سکے تھے انہوں نے چھین لئے ہیں ۔ آئیں سب ملکر لوگوں کے معاشی اور جمہوری حقوق کیلئے ملکر جدوجہد کریں۔

%d bloggers like this: